میٹھے کا زیادہ استعمال ہائی بلڈپریشر اور دل کے امراض کا سبب بنتا ہے

زیادہ وزن والے موٹے افراد میں ٹائپ ٹو ذیابیطس اور ہائی بلڈ پریشر ہونے کے امکانات قدرے زیادہ ہوتے ہیں۔ زیادہ وزن والے افراد میں دل کے دورے اور فالج کا خطرہ بھی زیادہ ہوتا ہے

  • 10
    Shares
ہائی بلڈ پریشر اس وقت ہوتا ہے جب آپ کا بلڈ پریشر ، آپ کے خون کی وریدوں میں بہنے والے خون کی قوت ، مستقل طور پر بہت زیادہ ہو جاتا ہے۔ اسن کیفیت میں وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ آپ کے خون کی شریانوں کی لچک مسلسل کم ہوتی جاتی ۔ اور ہھر اس سے ان شریانوں میں بہنے والے خون کی مقدار محدود ہوجاتی ہے۔ آپ کے دل کو خون کی فراہمی میں کمی یا بندش سے دل کا دورہ پڑ سکتا ہے۔ اس حوالے سے آپ کی غذا سے شوگر کا استعمال کم کر کے اس خطرے کو کافی حد تک کم کیا جاسکتا ہے۔
 
میڈیکل ریسرچرز کے مطابق شوگر کا استعمال بلڈ پریشر کیلئے نمک کے استعمال سے بھی بہت زیادہ خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔ ماہرین طب کے مطابق مریض کیلئے ایک گائیڈ لائن ضروری ہے کہ نمک کے علاوہ چینی کے استعمال کے کس قدر خطرات ہیں اور ان کو کیسے کنٹڑول میں رکھا جا سکتا ہے۔
 
شوگر کی زیادتی سے پیدا ہونے والے ہائی بلڈ پریشر سے سب سے پہلے دل شدید متاثر ہوتا ہے۔ ہائی بلڈ پریشر یا دل کے عوارض میں مبتلا لوگوں کو خاص طور پر شوگر کے استعمال سے پرہیز کرنا چاہئے۔ میٹھے کے زیادہ استعمال سے وقت گزرنے کے ساتھ دل کی بیماریوں کے خطرات میں اضافہ ہوتا ہے۔ ایسی صورت میں دل میں خون کا بہاؤ کم ہو جانے سے شریانوں کی دیواروں میں اییترووما (یا فیٹی میٹریل) جمع ہو جاتا ہے، جو مابعد دل کے پیچیدہ امراض اور شدید طبعی مشکلات کا موجب بنتا ہے۔

خیال رہے کہ زیادہ وزن والے افراد میں ٹائپ ٹو ذیابیطس اور ہائی بلڈ پریشر ہونے کے امکانات قدرے زیادہ ہوتے ہیں۔ زیادہ وزن والے افراد میں دل کے دورے اور فالج کا خطرہ بھی زیادہ ہوتا ہے ۔

میٹھی غذاؤں میں کیلوریز کی مقدار زیادہ اور اکثر کچھ دیگر غذائی اجزاء بھی ہوتے ہیں۔ ایسی غذاؤں کے بعد بہت تیزی سے توانائی حاصل ہوتی ہے لیکن پھر جلد ہی کم ہو جاتی ہے۔ آپ کو سستی اور توانائی کی کمی محسوس ہوسکتی ہے اور آپ میں مزید میٹھے ھانوں کی خواہش پیدا ہوتی ہے، آپ اور میٹھا کھاتے ہیں اور یوں وزن بڑھتا چلا جاتا ہے۔
 
 شوگر چونکہ جلدی ہضم اور جسم میں جلد جذب ہوجاتی ہے لہذا اس سے ہائی بلڈ شوگر اور انسولین کی سطح میں اضافہ کے امکانات بھی فوری ہوتے ہیں۔ جو بعد میں آپ کی صحت کیلئے انتہائی نقصان دہ ثابت ہوسکتے ہیں۔  طبی ماہرین کے مطابق ہائی بلڈ پریشر والے کئی لوگوں میں اس وقت بھی ظاہری علامات نہیں ہوتیں جب ان کا بلڈ پریشر خطرناک حد تک بڑھ چکا ہوتا ہے۔

ہائی بلڈ پریشر والے افراد کو سر میں درد ، سانس لینے میں تکلیف جیسی علامات ہوسکتی ہیں۔ لیکن یہ ضروری نہیں کہ ایسی علامات ظاہر ہوں۔ عام طور پر ہائی بلڈ پریشر کی علامات اس وقت ظاہر ہوتیں ہیں جب تک کہ یہ مرض شدید یا جان لیوا مرحلے تک پہنچ چکا ہوتا ہے۔

آپ کو بغیر کسی علامت کے برسوں سے ہائی بلڈ پریشر ہوسکتا ہے۔ آپ کو علم نہیں ہوتا لیکن خون کی نالیوں اور دل کو نقصان جاری رہتا ہے۔ جس کا صرف طبعی معائنوں اور متعلقہ ٹیسٹوں سے پتہ لگایا جاسکتا ہے۔ ہائی بلڈ پریشر کی عمومی علامات میں سینے میں تیز دھڑکن، پیشاب میں خون کی آمیزش یا شدید سر درد شامل ہیں۔
 
یہ بہت اہم ہے کہ چالیس سال سے زیادہ عمر کے تمام خواتین و حضرات کو ہر پانچ سال میں کم از کم ایک بار لازمی اپنے بلڈ پریشر اور دل کا چیک اپ کروانا چاہئے۔
 
فاروق رشید بٹ
 
  • 10
    Shares

Related articles

Comments

urdu articles

میٹھے کا زیادہ استعمال ہائی بلڈپریشر اور دل کے امراض کا سبب بنتا ہے

ہائی بلڈ پریشر اس وقت ہوتا ہے جب آپ کا بلڈ پریشر ، آپ کے خون کی وریدوں میں بہنے والے خون کی قوت...

وائرس کیخلاف قوت مدافعت کیلئے جڑی بوٹیوں سے چینی طریقہ علاج

 کرونا وائرس کے حالیہ عالمی کرائسس میں چین نے کرونا سے صحت یاب ہونے والے مریضوں کے خون سے لئے گیے پلازمہ کے ذریعے...

کرونا وائرس کیخلاف جدوجہد کی اجتماعی پلاننگ

اس حقیقت سے انکار نہیں کیا جاسکتا کہ پاکستان میں بڑے پیمانے پرغربت ہے۔ اداریاتی اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ ہماری...

Current Affairs

میٹھے کا زیادہ استعمال ہائی بلڈپریشر اور دل کے امراض کا سبب بنتا ہے

ہائی بلڈ پریشر اس وقت ہوتا ہے جب آپ کا بلڈ پریشر ، آپ کے خون کی وریدوں میں بہنے والے خون کی قوت...

Strategy to defeat COVID -19 by dealing mass poverty

SHARE  POST There is no denial of the fact the we have mass poverty in our country. Rough estimates shows nearly 40% of our...

Govt and people should go for combine combat against COVID-19

So far in Pakistan public movement and routine is quite usual, seems like people are still non serious about the pandemic and the disastrous...

COVID-19 PAKISTAN

میٹھے کا زیادہ استعمال ہائی بلڈپریشر اور دل کے امراض کا سبب بنتا ہے

ہائی بلڈ پریشر اس وقت ہوتا ہے جب آپ کا بلڈ پریشر ، آپ کے خون کی وریدوں میں بہنے والے خون کی قوت...

Strategy to defeat COVID -19 by dealing mass poverty

SHARE  POST There is no denial of the fact the we have mass poverty in our country. Rough estimates shows nearly 40% of our...

Govt and people should go for combine combat against COVID-19

So far in Pakistan public movement and routine is quite usual, seems like people are still non serious about the pandemic and the disastrous...

Immunity Booster

Food inflation and holy month of Ramadan

The sky rocketing prices of basic food items are depriving the people from basic food and nutritional needs in the Holy month of Ramadan....

COVID-19 and food security in Pakistan

Food is the basic necessity of all living beings on the planet earth. From humble bacteria to human beings all are striving for the...

Welfare funds in corona crisis and dietary needs

In wake of global pandemic scenario different governments are stimulating the economy by providing welfare funds directly to the public. particularly who lost their...

وائرس کیخلاف قوت مدافعت کیلئے جڑی بوٹیوں سے چینی طریقہ علاج

 کرونا وائرس کے حالیہ عالمی کرائسس میں چین نے کرونا سے صحت یاب ہونے والے مریضوں کے خون سے لئے گیے پلازمہ کے ذریعے...